Fawad misquotes Ghalib’s couplet and Twitter is not having it | Pakistan Today

Fawad misquotes Ghalib’s couplet and Twitter is not having it

Federal Information and Broadcasting Minister Fawad Chaudhry misquoted a couplet by iconic Urdu poet Mirza Ghalib while sharing a notice of National Accountability Bureau.

Sharing the press release by NAB, Chaudhry wrote: “ہر اک بات پہ کہتے ہو کہ تو کیا ہے۔۔۔۔ تمھیں کہو یہ انداز گفتگو کیا ہے ۔۔۔۔۔.”

Pointing out the mistake and slamming the minister for it, a private news channel employee wrote: “آپ کو نیب کے ساتھ جو کرنا ہے کیجئے ، براہِ مہربانی غالب کی روح اور اُن کے اشعار کو سزا مت دیں۔ ہر “ایک” بات پہ کہتے ہو “تم کہ ” تو کیا ہے تم ہی کہو کہ یہ انداز گفتگو کیا ہے.”

Raising the question about the respect of Ghalib, another user wrote: “# Hua Hai Shah ka Musaheb Phirey Hey Itraata, Wager Na Jane Shahar me GHALIB ki Aabru Kia Hai ?.”

Taunting in poetic style, another wrote: “میخانے کی توہین ہے رندوں کی ہتک ہے کم ظرف کے ہاتھوں میں اگر جام دیا جائے.”

Taking a sarcastic tone, another said: “یارتم لوگ بھی نا ! پہلے چودھری کے بولنے پہ معترض اوراب لکھنے پہ بھی …”

One user, however, kind of criticised the people and Ghalib to an extent, writing, “ویسے جب یورپ میں آکسفورڈ جیسے ادارے بن رہے تھے تو ایسٹ والے “چچا غالب ” کی زلفوں کے اسیر ہوے تھے ۔”.

One user declared that the information minister does not know anything about Ghalib: “بھائی ان کو پتہ ہی نہیں غالب کون ہے اور روح کس کو کہتے ہیں.”



Related posts

Top